تم اگر ساتھ دینے کا وعدہ کرو

ساحر لدھیانوی

تم اگر ساتھ دینے کا وعدہ کرو

ساحر لدھیانوی

MORE BYساحر لدھیانوی

    تم اگر ساتھ دینے کا وعدہ کرو

    میں یوں ہی مست نغمے لٹاتا رہوں

    تم مجھے دیکھ کر مسکراتی رہو

    میں تمہیں دیکھ کر گیت گاتا رہوں

    کتنے جلوے فضاؤں میں بکھرے مگر

    میں نے اب تک کسی کو پکارا نہیں

    تم کو دیکھا تو نظریں یہ کہنے لگیں

    ہم کو چہرے سے ہٹنا گوارا نہیں

    تم اگر میری نظروں کے آگے رہو

    میں ہر اک شے سے نظریں چراتا رہوں

    میں نے خوابوں میں برسوں تراشا جسے

    تم وہی سنگ مرمر کی تصویر ہو

    تم نہ سمجھو تمہارا مقدر ہوں میں

    میں سمجھتا ہوں تم میری تقدیر ہو

    تم اگر مجھ کو اپنا سمجھنے لگو

    میں بہاروں کی محفل سجاتا رہوں

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Sahir Ludhianvi (Pg. 329)
    • Author : SAHIR LUDHIANVI
    • مطبع : Farid Book Depot (Pvt.) Ltd

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY