ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں

علامہ اقبال

ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں

علامہ اقبال

MORE BY علامہ اقبال

    INTERESTING FACT

    حصہ اول : 1905  ( بانگ درا)

    ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں

    مری سادگی دیکھ کیا چاہتا ہوں

    ستم ہو کہ ہو وعدۂ بے حجابی

    کوئی بات صبر آزما چاہتا ہوں

    یہ جنت مبارک رہے زاہدوں کو

    کہ میں آپ کا سامنا چاہتا ہوں

    ذرا سا تو دل ہوں مگر شوخ اتنا

    وہی لن ترانی سنا چاہتا ہوں

    کوئی دم کا مہماں ہوں اے اہل محفل

    چراغ سحر ہوں بجھا چاہتا ہوں

    بھری بزم میں راز کی بات کہہ دی

    بڑا بے ادب ہوں سزا چاہتا ہوں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    طاہرہ سید

    طاہرہ سید

    رادھکا چوپڑا

    رادھکا چوپڑا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites