آ گیا ہو نہ کوئی بھیس بدل کر دیکھو

مخمور سعیدی

آ گیا ہو نہ کوئی بھیس بدل کر دیکھو

مخمور سعیدی

MORE BYمخمور سعیدی

    آ گیا ہو نہ کوئی بھیس بدل کر دیکھو

    دو قدم سائے کے ہم راہ بھی چل کر دیکھو

    میہماں روشنیو سخت اندھیرا ہے یہاں

    پاؤں رکھنا مری چوکھٹ پہ سنبھل کر دیکھو

    کبھی ایسا نہ ہو پہچان نہ پاؤ خود کو

    بار بار اپنے ارادے نہ بدل کر دیکھو

    ابر آئے گا تبھی پیاس بجھانے پہلے

    ریگ صحرا کی طرح دھوپ میں جل کر دیکھو

    دن کی دیکھی ہوئی ہر شکل بدل جائے گی

    رات کے ساتھ ذرا گھر سے نکل کر دیکھو

    موم ہو جائے گا پتھر سا یہ دل سینے میں

    لمحہ بھر کو کسی پہلو میں پگھل کر دیکھو

    عمر رفتہ کو کہاں ڈھونڈھ رہے ہو مخمورؔ

    اس کے کوچے میں ملے گی وہیں چل کر دیکھو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY