آدھی آگ اور آدھا پانی ہم دونوں

مدن موہن دانش

آدھی آگ اور آدھا پانی ہم دونوں

مدن موہن دانش

MORE BYمدن موہن دانش

    آدھی آگ اور آدھا پانی ہم دونوں

    جلتی بجھتی ایک کہانی ہم دونوں

    مندر مسجد گرجا گھر اور گرودوارہ

    لفظ کئی ہیں ایک معانی ہم دونوں

    روپ بدل کر نام بدل کر آتے ہیں

    فانی ہو کر بھی لا فانی ہم دونوں

    گیانی دھیانی چتر سیانی دنیا میں

    جیتے ہیں اپنی نادانی ہم دونوں

    آدھا آدھا بانٹ کے جیتے رہتے ہیں

    رونق ہو یا ہو ویرانی ہم دونوں

    نظر لگے نا اپنی جگ مگ دنیا کو

    کرتے رہتے ہیں نگرانی ہم دونوں

    خوابوں کا اک نگر بسا لیتے ہیں روز

    اور بن جاتے ہیں سیلانی ہم دونوں

    تو ساون کی شوخ گھٹا میں پیاسا بن

    چل کرتے ہیں کچھ من مانی ہم دونوں

    اک دوجے کو روز سناتے ہیں دانشؔ

    اپنی اپنی رام کہانی ہم دونوں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY