آدمی نہ اتنا بھی دور ہو زمانے سے

شکیل بدایونی

آدمی نہ اتنا بھی دور ہو زمانے سے

شکیل بدایونی

MORE BYشکیل بدایونی

    آدمی نہ اتنا بھی دور ہو زمانے سے

    صبح کو جدا سمجھے شام کے فسانے سے

    دیکھ طفلک ناداں قدر کر بزرگوں کی

    گتھیاں نہ سلجھیں گی مضحکہ اڑانے سے

    زخم سر کے دیوانے زخم دل کا قائل ہو

    زندگی سنورتی ہے دل پہ چوٹ کھانے سے

    مطرب جنوں ساماں تو نہ چھیڑ یہ نغمہ

    دھن خراب ہوتی ہے تیرے گنگنانے سے

    گرمئ سخن سے کچھ کام بن نہیں سکتا

    مل ہی جائے گی منزل دو قدم بڑھانے سے

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Shakiil Badaayuuni (Pg. 580)
    • Author : Shakiil Badaayuuni
    • مطبع : Farid Book Depot (Pvt.) Ltd

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY