Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

آگے وہ جا بھی چکے لطف نظارہ بھی گیا

ابو محمد واصل بہرائچی

آگے وہ جا بھی چکے لطف نظارہ بھی گیا

ابو محمد واصل بہرائچی

MORE BYابو محمد واصل بہرائچی

    آگے وہ جا بھی چکے لطف نظارہ بھی گیا

    چشم غفلت نہ کھلی صبح کا تارا بھی گیا

    سرد مہری سے تری گرمئ الفت نہ رہی

    دل میں اٹھتا تھا جو ہر دم وہ شرارہ بھی گیا

    دل کے آئینے میں جب آپ کی صورت دیکھی

    جس کو دھوکا میں سمجھتا تھا وہ دھوکا بھی گیا

    عشق کو تاب تجلی نہیں کیا دیکھے گا

    حسن یہ جان کے پردوں کو اٹھاتا بھی گیا

    کس نے پائی ہے غم یار محبت سے نجات

    عشق کا بوجھ کہیں سر سے اتارا بھی گیا

    تیرے قدموں پہ جو لذت ہے وہ حاصل نہ ہوئی

    یوں تو سجدے میں سر عجز جھکایا بھی گیا

    دل کی آشفتہ مزاجی میں نہ کچھ فرق آیا

    بارہا زلف پریشاں کو سنوارا بھی گیا

    مانگنے سے کہیں یہ چیز ملا کرتی ہے

    دل چرانے ہی کے قابل تھا چرایا بھی گیا

    بے خودی تجھ پہ تصدق ہوں مرے ہوش و حواس

    سامنے ہوتے ہوئے ان کو پکارا بھی گیا

    ایک ہی چیز ہے پردے میں کہ بیرون حجاب

    مجھ کو ظاہر بھی کیا خود کو چھپایا بھی گیا

    پھر بھی آنکھیں رہیں محروم تماشائے جمال

    ان کی تصویر کو شیشے میں اتارا بھی گیا

    چھوڑ کر مجھ کو بھنور میں نہ خبر لی میری

    اک سہارا تھا تمہارا وہ سہارا بھی گیا

    پائے محبوب پہ سر رکھ کے ہوئے ہم واصلؔ

    زندگی پائی نئی موت کا دھڑکا بھی گیا

    دل کے آئینے میں نادیدہ تجلی دیکھی

    خود نمائی کا بھلا ہو کہ وہ پردا بھی گیا

    مأخذ :
    • کتاب : Jalwa-e-Haq (Pg. 54)
    • Author : Abu Mohammad vasil
    • مطبع : Urdu Academy (2000)
    • اشاعت : 2000

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے