آہ وہ کون تھا خدا مارا

معروف دہلوی

آہ وہ کون تھا خدا مارا

معروف دہلوی

MORE BYمعروف دہلوی

    آہ وہ کون تھا خدا مارا

    جس نے اس سے مجھے لگا مارا

    کیا غضب تھی وہ جنبش ابرو

    صاف جیسے کہ نیمچا مارا

    بعد مدت ملے تھے کل ان سے

    آج لوگوں نے پھر لگا مارا

    وصل کی شب بھی میں نہ سویا آہ

    روز ہجر ان کے خوف کا مارا

    پا کے مرضی کھلا جو باتوں میں

    یہ ہنسایا کہ بس لٹا مارا

    جنس‌ صبر و خرد لٹے معروفؔ

    ملک دل فوج غم نے آ مارا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY