آئینہ تمہارے نقش پا کا

حسن بریلوی

آئینہ تمہارے نقش پا کا

حسن بریلوی

MORE BYحسن بریلوی

    آئینہ تمہارے نقش پا کا

    خورشید کو دے سبق جلا کا

    او وصل میں منہ چھپانے والے

    یہ بھی کوئی وقت ہے حیا کا

    جب آنکھ کھلی تو بے خودوں سے

    پردہ تھا جمال خود نما کا

    دل اور وہ بت زہے مقدر

    ظلم اور یہ دل غضب خدا کا

    جا بیٹھے ہیں مجھ سے دور اٹھ کر

    کیا پاس کیا ہے التجا کا

    بولے وہ حسنؔ کا خون مل کر

    کیا شوخ ہے رنگ اس حنا کا

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 130)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY