آئنہ آئنہ کیوں کر دیکھے

احسان اکبر

آئنہ آئنہ کیوں کر دیکھے

احسان اکبر

MORE BY احسان اکبر

    آئنہ آئنہ کیوں کر دیکھے

    اپنے ہی داغ نظر بھر دیکھے

    تم نے جلوے کو بھی چھونا چاہا

    ہم نے خوشبو میں بھی پیکر دیکھے

    آپ انساں ہوا صورت کا اسیر

    شیشہ ٹوٹے تو سکندر دیکھے

    ہم نے آواز لگائی سر طور

    روپ جب شوق سے کمتر دیکھے

    جلوۂ طور بجا تھا لیکن

    آنکھ مشتاق تھی پیکر دیکھے

    درد کو خوف بکھر جانے کا

    آنکھ کو شوق کہ بڑھ کر دیکھے

    مستقل سب کا پتہ ایک ہی تھا

    کس نے فغفور و سکندر دیکھے

    مآخذ:

    • Book: Dariche (Pg. 29)
    • Author: Bashir Saifi
    • مطبع: Shakhsar Publishers (1975)
    • اشاعت: 1975

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites