آج کیا حال ہے یا رب سر محفل میرا

جگر مراد آبادی

آج کیا حال ہے یا رب سر محفل میرا

جگر مراد آبادی

MORE BYجگر مراد آبادی

    آج کیا حال ہے یا رب سر محفل میرا

    کہ نکالے لیے جاتا ہے کوئی دل میرا

    سوز غم دیکھ نہ برباد ہو حاصل میرا

    دل کی تصویر ہے ہر آئینۂ دل میرا

    صبح تک ہجر میں کیا جانیے کیا ہوتا ہے

    شام ہی سے مرے قابو میں نہیں دل میرا

    مل گئی عشق میں ایذا طلبی سے راحت

    غم ہے اب جان مری درد ہے اب دل میرا

    پایا جاتا ہے تری شوخیٔ رفتار کا رنگ

    کاش پہلو میں دھڑکتا ہی رہے دل میرا

    ہائے اس مرد کی قسمت جو ہوا دل کا شریک

    ہائے اس دل کا مقدر جو بنا دل میرا

    کچھ کھٹکتا تو ہے پہلو میں مرے رہ رہ کر

    اب خدا جانے تری یاد ہے یا دل میرا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY