آج یادوں نے عجب رنگ بکھیرے دل میں

عبد الرؤف عروج

آج یادوں نے عجب رنگ بکھیرے دل میں

عبد الرؤف عروج

MORE BY عبد الرؤف عروج

    آج یادوں نے عجب رنگ بکھیرے دل میں

    مسکراتے ہیں سر شام سویرے دل میں

    یہ تبسم کا اجالا یہ نگاہوں کی سحر

    لوگ یوں بھی تو چھپاتے ہیں اندھیرے دل میں

    صورت باد صبا قافلۂ یاد آیا

    زخم در زخم کھلے پھول سے میرے دل میں

    یاس کی رات کٹی آس کا سورج چمکا

    پھر بھی چمکے نہ کسی روز سویرے دل میں

    اک مری وحشت بے نام پہ اس طرح نہ سوچ

    کتنی باتیں ہیں جو کھٹکی نہیں تیرے دل میں

    دھیان کی شمع کی لو تیز بھی کر دیتے ہیں

    اکثر اوقات تری یاد کے پھیرے دل میں

    نہ ملی فرصت آسائش تعبیر عروج

    ایک مدت سے ہیں خوابوں کے بسیرے دل میں

    0
    COMMENT
    COMMENTS
    تبصرے دیکھیے

    Critique mode ON

    Tap on any word to submit a critique about that line. Word-meanings will not be available while you’re in this mode.

    OKAY

    SUBMIT CRITIQUE

    نام

    ای-میل

    تبصره

    Thanks, for your feedback

    Critique draft saved

    EDIT DISCARD

    CRITIQUE MODE ON

    TURN OFF

    Discard saved critique?

    CANCEL DISCARD

    CRITIQUE MODE ON - Click on a line of text to critique

    TURN OFF

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites