آج یاروں کو مبارک ہو کہ صبح عید ہے

آبرو شاہ مبارک

آج یاروں کو مبارک ہو کہ صبح عید ہے

آبرو شاہ مبارک

MORE BYآبرو شاہ مبارک

    آج یاروں کو مبارک ہو کہ صبح عید ہے

    راگ ہے مے ہے چمن ہے دل ربا ہے دید ہے

    دل دوانہ ہو گیا ہے دیکھ یہ صبح بہار

    رسمسا پھولوں بسا آیا انکھوں میں نیند ہے

    شیر عاشق آج کے دن کیوں رقیباں پے نہ ہوں

    یار پایا ہے بغل میں خانۂ خورشید ہے

    غم کے پیچھو راست کہتے ہیں کہ شادی ہووے ہے

    حضرت رمضاں گئے تشریف لے اب عید ہے

    عید کے دن رووتا ہے ہجر سیں رمضان کے

    بے نصیب اس شیخ کی دیکھو عجب فہمید ہے

    سلک اس کی نظم کا کیوں کر نہ ہووے قیمتی

    آبروؔ کا شعر جو دیکھا سو مروارید ہے

    مآخذ :
    • کتاب : Deewan-e-Aabro (Pg. 262)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY