آخر کو راہ عشق میں ہم سر کے بل گئے

منیرؔ  شکوہ آبادی

آخر کو راہ عشق میں ہم سر کے بل گئے

منیرؔ  شکوہ آبادی

MORE BYمنیرؔ  شکوہ آبادی

    آخر کو راہ عشق میں ہم سر کے بل گئے

    مشکل میں ہاتھ پاؤں ہمارے نکل گئے

    کس کس کو یاد کر کے کوئی روئے اے فلک

    آنکھوں کے آگے لاکھ زمانے بدل گئے

    عشاق لکھنؤ کی کشش دیکھ اے مسیح

    لندن کے خوب رو بھی فرنگی محل گئے

    اپنا سراغ پوچھتے پھرتے ہیں موت سے

    آفت زدوں کے ہجر میں نقشے بدل گئے

    بدلو ردیف اور پڑھو شعر اے منیرؔ

    کیا فائدہ جو اس کے قوافی بدل گئے

    مآخذ:

    • کتاب : Intekhab-e-Kalam Muneer Shikohabadi (Pg. 59)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY