آنے کو نظر میں مری سو فتنہ گر آئے

رسا رامپوری

آنے کو نظر میں مری سو فتنہ گر آئے

رسا رامپوری

MORE BYرسا رامپوری

    آنے کو نظر میں مری سو فتنہ گر آئے

    تجھ سا نظر آیا ہے نہ تجھ سا نظر آئے

    کھل جائے بھرم ضبط محبت کا نہ ان پر

    ڈرتا ہوں کہیں آنکھ میں آنسو نہ بھر آئے

    مے خانے پہ کیا ابر ہے چھایا ہوا یارب

    جلوے تری رحمت کے یہاں بھی نظر آئے

    کرتا ہوں دعائیں تو یہ آتی ہیں ندائیں

    تو ہو کسی قابل تو دعا میں اثر آئے

    کرتا ہے وہی دل میں رساؔ کے جو ٹھنی ہے

    سمجھانے کو سمجھاتے ہیں سب اپنے پرائے

    مآخذ:

    • کتاب : intekhaabe-e-sukhan(jild-duum) (Pg. 100)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY