آنکھ دریا جگر لہو کرنا

اختر ضیائی

آنکھ دریا جگر لہو کرنا

اختر ضیائی

MORE BYاختر ضیائی

    آنکھ دریا جگر لہو کرنا

    کتنا مشکل ہے آرزو کرنا

    تجزیہ دل نشیں خیالوں کا

    ہے غزالوں کی جستجو کرنا

    تذکرہ ان کی دل نوازی کا

    اور پھر میرے روبرو کرنا

    بس یہی ایک شغل تنہائی

    رہ گیا خود سے گفتگو کرنا

    کشتگان الم سے سیکھا ہے

    درد مندوں کی آبرو کرنا

    دوستوں کے کرم سے چھوڑ دیا

    ہم نے اندیشۂ عدو کرنا

    بچنا ہر نوک خار سے اخترؔ

    زخم پھولوں کے بھی رفو کرنا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے