آنکھ کے گوشے ہو کر نم آباد ہوئے

علی قیصر

آنکھ کے گوشے ہو کر نم آباد ہوئے

علی قیصر

MORE BYعلی قیصر

    آنکھ کے گوشے ہو کر نم آباد ہوئے

    دل کی بستی کے سب غم آباد ہوئے

    جیسے اک دریا چومے صحراؤں کو

    تیرے لمس پہ ایسے ہم آباد ہوئے

    کس نے چھو کر ہم کو ہوش دلایا ہے

    کس کے چھونے سے پھر ہم آباد ہوئے

    دیواریں دروازے اور ہم دیوانے

    سن کر پائل کی چھم چھم آباد ہوئے

    دل نے تیرا نام لیا سرشاری میں

    سانسوں کے ویران ردھم آباد ہوئے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے