آنکھیں بجھ جائیں گی شعلہ رہ جائے گا

فیضان ہاشمی

آنکھیں بجھ جائیں گی شعلہ رہ جائے گا

فیضان ہاشمی

MORE BYفیضان ہاشمی

    آنکھیں بجھ جائیں گی شعلہ رہ جائے گا

    یعنی جو دیکھا تھا دیکھا رہ جائے گا

    اگلی ساعت شعر پورا کر پائے گی

    یا یہ مصرعہ میرے جیسا رہ جائے گا

    تیرا بوسہ ایسا پیالہ ہے جس میں سے

    پانی پینے والا پیاسا رہ جائے گا

    دونوں میں سے اس پہ دل کو رکنا ہوگا

    لمحوں میں سے جو زیادہ رہ جائے گا

    میری آہٹ سن لے جو تو سن سکتا ہے

    پھر یہ آنا جانا نغمہ رہ جائے گا

    رنگ آخر اڑتے جائیں گے یادوں کے

    دل میں باقی ہے جو خاکہ رہ جائے گا

    لڑکیاں دو اٹھ نہ پائیں گی لیٹی تو

    حسن اپنا حسن چنتا رہ جائے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY