آنکھیں یوں برسیں پیراہن بھیگ گیا

مصور سبزواری

آنکھیں یوں برسیں پیراہن بھیگ گیا

مصور سبزواری

MORE BYمصور سبزواری

    آنکھیں یوں برسیں پیراہن بھیگ گیا

    تیرے دھیان میں سارا ساون بھیگ گیا

    خشک محاذو بڑھ کے مجھے سلامی دو

    میرے لہو کی چھینٹوں سے رن بھیگ گیا

    تم نے مے پی چور چور میں نشے میں

    کس نے نچوڑا کس کا دامن بھیگ گیا

    کیا نمناک ہنسی دیوار و در پر تھی

    بچا کھچا سب رنگ و روغن بھیگ گیا

    سجنی کی آنکھوں میں چھپ کر جب جھانکا

    بن ہولی کھیلے ہی ساجن بھیگ گیا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    آنکھیں یوں برسیں پیراہن بھیگ گیا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY