آنکھوں سے حیا ٹپکے ہے انداز تو دیکھو

مومن خاں مومن

آنکھوں سے حیا ٹپکے ہے انداز تو دیکھو

مومن خاں مومن

MORE BYمومن خاں مومن

    آنکھوں سے حیا ٹپکے ہے انداز تو دیکھو

    ہے بو الہوسوں پر بھی ستم ناز تو دیکھو

    اس بت کے لیے میں ہوس حور سے گزرا

    اس عشق خوش انجام کا آغاز تو دیکھو

    چشمک مری وحشت پہ ہے کیا حضرت ناصح

    طرز نگہ چشم فسوں ساز تو دیکھو

    ارباب ہوس ہار کے بھی جان پہ کھیلے

    کم طالعی عاشق جاں باز تو دیکھو

    مجلس میں مرے ذکر کے آتے ہی اٹھے وہ

    بدنامیٔ عشاق کا اعزاز تو دیکھو

    محفل میں تم اغیار کو دز دیدہ نظر سے

    منظور ہے پنہاں نہ رہے راز تو دیکھو

    اس غیرت ناہید کی ہر تان ہے دیپک

    شعلہ سا لپک جائے ہے آواز تو دیکھو

    دیں پاکی دامن کی گواہی مرے آنسو

    اس یوسف بے درد کا اعجاز تو دیکھو

    جنت میں بھی مومنؔ نہ ملا ہائے بتوں سے

    جور اجل تفرقہ پرداز تو دیکھو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY