آنکھوں سے نور دل سے خوشی چھین لی گئی

اقبال عظیم

آنکھوں سے نور دل سے خوشی چھین لی گئی

اقبال عظیم

MORE BYاقبال عظیم

    آنکھوں سے نور دل سے خوشی چھین لی گئی

    ہم سے ہماری زندہ دلی چھین لی گئی

    اک روز اتفاق سے ہم مسکرائے تھے

    اس کی سزا میں ہم سے ہنسی چھین لی گئی

    کتنے چراغ نور سے محروم ہو گئے

    جب سے ہماری خوش نظری چھین لی گئی

    شکوہ مرا مزاج نہ ماتم مری سرشت

    ہر چند مجھ سے خندہ لبی چھین لی گئی

    اقبالؔ اس خوشی کا بھروسہ بھی کچھ نہ تھا

    اچھا ہوا یہ درد سری چھین لی گئی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    اقبال عظیم

    اقبال عظیم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY