آنکھوں سے تری زلف کا سایہ نہیں جاتا

عبد الحمید عدم

آنکھوں سے تری زلف کا سایہ نہیں جاتا

عبد الحمید عدم

MORE BYعبد الحمید عدم

    آنکھوں سے تری زلف کا سایہ نہیں جاتا

    آرام جو دیکھا ہے بھلایا نہیں جاتا

    اللہ رے نادان جوانی کی امنگیں!

    جیسے کوئی بازار سجایا نہیں جاتا

    آنکھوں سے پلاتے رہو ساغر میں نہ ڈالو

    اب ہم سے کوئی جام اٹھایا نہیں جاتا

    بولے کوئی ہنس کر تو چھڑک دیتے ہیں جاں بھی

    لیکن کوئی روٹھے تو منایا نہیں جاتا

    جس تار کو چھیڑیں وہی فریاد بہ لب ہے

    اب ہم سے عدمؔ ساز بجایا نہیں جاتا

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Adm (Pg. 80)
    • Author : Abdul Hameed Adm
    • مطبع : Alhamd Publications, Lahore (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے