آپ دینے کو کیا نہیں دیتے

جاوید صدیقی اعظمی

آپ دینے کو کیا نہیں دیتے

جاوید صدیقی اعظمی

MORE BYجاوید صدیقی اعظمی

    آپ دینے کو کیا نہیں دیتے

    بس وفا کا صلہ نہیں دیتے

    راہ ان کی بہت کشادہ ہے

    جو کبھی راستہ نہیں دیتے

    میں بھی رسماً سلام کرتا ہوں

    دل سے وہ بھی دعا نہیں دیتے

    میں یہی سوچتا ہوں میں اکثر

    وہ مجھے کیوں بھلا نہیں دیتے

    صرف تجھ کو پکارتے ہیں ہم

    ہر کسی کو صدا نہیں دیتے

    ان سے جاویدؔ جنگ لازم ہے

    حق کا جو فیصلہ نہیں دیتے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY