عاشقی میں خامشی ممکن ہے نا ممکن نہیں

مخمور جالندھری

عاشقی میں خامشی ممکن ہے نا ممکن نہیں

مخمور جالندھری

MORE BYمخمور جالندھری

    عاشقی میں خامشی ممکن ہے نا ممکن نہیں

    کیا کروں مجھ سے تو ضبط التجا ممکن نہیں

    طالب آزار عشق اور حسن آسائش پسند

    تو بھی ہو میرا شریک مدعا ممکن نہیں

    میں جو مٹ جاؤں تو بدلوں رنگ و بو کا پیرہن

    عالم ایجاد میں میری فنا ممکن نہیں

    ہر جگہ جلوے ترے میری نظر کے ساتھ ہیں

    میں پکاروں تو نہ ہو جلوہ نما ممکن نہیں

    سازش دریا و ساحل سے تو ممکن ہے مگر

    مجھ کو یہ موجیں ڈبو دیں نا خدا ممکن نہیں

    جس نظر کو میرے درد دل کا بھی عرفاں نہ ہو

    وہ نظر ہو جائے عالم آشنا ممکن نہیں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY