آسودگان ہجر سے ملنے کی چاہ میں

عابد ملک

آسودگان ہجر سے ملنے کی چاہ میں

عابد ملک

MORE BYعابد ملک

    آسودگان ہجر سے ملنے کی چاہ میں

    کوئی فقیر بیٹھا ہے صحرا کی راہ میں

    پھر یوں ہوا کہ شوق سے کھولی نہ میں نے آنکھ

    اک خواب آ گیا تھا مری خواب گاہ میں

    اس بار کتنی دیر یہاں ہوں خبر نہیں

    آ تو گیا ہوں پھر سے تری بارگاہ میں

    پھر کار زندگی نے مجھے چھوڑنا نہیں

    کچھ دن یہیں گزار لوں اپنی پناہ میں

    یاروں نے آ کے جان بچائی مری کہ میں

    خود سے الجھ پڑا تھا یوں ہی خواہ مخواہ میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY