آوارگی نے دل کی عجب کام کر دیا

منصور عثمانی

آوارگی نے دل کی عجب کام کر دیا

منصور عثمانی

MORE BYمنصور عثمانی

    آوارگی نے دل کی عجب کام کر دیا

    خوابوں کو بوجھ نیندوں کو الزام کر دیا

    کچھ آنسو اپنے پیار کی پہچان بن گئے

    کچھ آنسوؤں نے پیار کو بد نام کر دیا

    جس کو بچائے رکھنے میں اجداد بک گئے

    ہم نے اسی حویلی کو نیلام کر دیا

    دل کو بچا کے رکھا تھا دنیا سے آج تک

    لے آج ہم نے یہ بھی ترے نام کر دیا

    تم نے نظر جھکا کے جہاں بات کاٹ دی

    ہم نے وہیں فسانے کا انجام کر دیا

    مأخذ :
    • کتاب : Kashmakash (Pg. 42)
    • Author : Mansoor Usmani
    • مطبع : Najma House, Baradari, Moradabad (2007)
    • اشاعت : 2007

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY