آواز اپنے دل کی ہوں بانگ درا نہیں

کمال جعفری

آواز اپنے دل کی ہوں بانگ درا نہیں

کمال جعفری

MORE BYکمال جعفری

    آواز اپنے دل کی ہوں بانگ درا نہیں

    آئے نہ میرے پاس جو درد آشنا نہیں

    غیروں سے بھی نباہ تمہارا نہ ہو سکا

    کیا اب بھی یہ کہو گے کہ تم بے وفا نہیں

    چہروں پہ اختلاف صداؤں میں انتشار

    اس شہر سنگ دل میں کوئی ہم نوا نہیں

    یوں گمرہی میں آج ہے ہر شخص مبتلا

    جیسے زمانے بھر میں کوئی رہنما نہیں

    منزل کدھر ہے اور کدھر راستہ کمالؔ

    وہ کیا بتائے جس کو خود اپنا پتا نہیں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY