آوے خزاں چمن کی طرف گر میں رو کروں

قائم چاندپوری

آوے خزاں چمن کی طرف گر میں رو کروں

قائم چاندپوری

MORE BYقائم چاندپوری

    آوے خزاں چمن کی طرف گر میں رو کروں

    غنچہ کرے گلوں کو صبا گر میں بو کروں

    آزردہ اس چمن میں ہوں مانند برگ خشک

    چھیڑے جو ٹک نسیم مجھے سو غلو کروں

    آنکھوں سے جائے اشک گریں گل چمن چمن

    منظور گریہ گر میں ترا رنگ و بو کروں

    آیا ہوں پارہ دوزئی دل سے نپٹ بتنگ

    ایسے پھٹے ہوئے کو میں کب تک رفو کروں

    کیا آرزو کہ خاک میں اپنی ملیں نہ یاں

    کس رو سے اب فلک سے میں کچھ آرزو کروں

    کہتا ہے آئنہ کہ ہے تجھ سا ہی ایک اور

    باور نہیں تو لا میں ترے روبرو کروں

    سارے ہی اس چمن سے ہوا خواہ اٹھ گئے

    روؤں گلوں کو یا میں غم رنگ و بو کروں

    قائمؔ یہ جی میں ہے کہ تقید سے شیخ کی

    اب کے جو میں نماز کروں بے وضو کروں

    مأخذ :
    • Deewan-e-Qaem Chandpuri (Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY