اب مسافت میں تو آرام نہیں آ سکتا

ادریس بابر

اب مسافت میں تو آرام نہیں آ سکتا

ادریس بابر

MORE BYادریس بابر

    اب مسافت میں تو آرام نہیں آ سکتا

    یہ ستارہ بھی مرے کام نہیں آ سکتا

    یہ مری سلطنت خواب ہے آباد رہو

    اس کے اندر کوئی بہرام نہیں آ سکتا

    جانے کھلتے ہوئے پھولوں کو خبر ہے کہ نہیں

    باغ میں کوئی سیہ فام نہیں آ سکتا

    ہر ہوا خواہ یہ کہتا تھا کہ محفوظ ہوں میں

    بجھنے والوں میں مرا نام نہیں آ سکتا

    میں جنہیں یاد ہوں اب تک یہی کہتے ہوں گے

    شاہزادہ کبھی ناکام نہیں آ سکتا

    ڈر ہی لگتا ہے کہ رستے میں نہ رہ جاؤں کہیں

    کہلوا دیجئے میں شام نہیں آ سکتا

    مأخذ :
    • کتاب : Tasteer (Pg. 290)
    • اشاعت : Issue No. 9,10 July/August. 1999

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے