اب مجھ کو کیا خبر وہ یہاں ہے بھی یا نہیں

شبنم شکیل

اب مجھ کو کیا خبر وہ یہاں ہے بھی یا نہیں

شبنم شکیل

MORE BYشبنم شکیل

    اب مجھ کو کیا خبر وہ یہاں ہے بھی یا نہیں

    ہر اک سے شہر میں تو مرا رابطہ نہیں

    جنت بنا تو سکتے ہیں اس کائنات کو

    لیکن مری طرح سے کوئی سوچتا نہیں

    جس رہ گزر پہ پھول سجے ہیں مرے لیے

    اے پائے شوق اب وہ مرا راستہ نہیں

    ظاہر سے مطمئن ہے مرے اور اک نقاب

    چہرے پہ جو پڑا ہے اسے دیکھتا نہیں

    جب تک تھی دل میں سانس بھی خوشبو بنی رہی

    ہونٹوں پہ آ کے بات میں اب کچھ رہا نہیں

    اک وقت تھا کہ راہ گزرنا محال تھا

    اب مڑ کے راستے میں کوئی دیکھتا نہیں

    اب شام ہو گئی ہے مجھے سونا چاہئے

    سورج ترے خیال کا گرچہ ڈھلا نہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Shab Zaad (Pg. 95)
    • Author : Shabnam Shakeel
    • مطبع : Mavaraa Publications (1978)
    • اشاعت : 1978

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY