اب شوق سے کہ جاں سے گزر جانا چاہیئے

احمد فراز

اب شوق سے کہ جاں سے گزر جانا چاہیئے

احمد فراز

MORE BYاحمد فراز

    اب شوق سے کہ جاں سے گزر جانا چاہیئے

    بول اے ہوائے شہر کدھر جانا چاہیئے

    کب تک اسی کو آخری منزل کہیں گے ہم

    کوئے مراد سے بھی ادھر جانا چاہیئے

    وہ وقت آ گیا ہے کہ ساحل کو چھوڑ کر

    گہرے سمندروں میں اتر جانا چاہیئے

    اب رفتگاں کی بات نہیں کارواں کی ہے

    جس سمت بھی ہو گرد سفر جانا چاہیئے

    کچھ تو ثبوت خون تمنا کہیں ملے

    ہے دل تہی تو آنکھ کو بھر جانا چاہیئے

    یا اپنی خواہشوں کو مقدس نہ جانتے

    یا خواہشوں کے ساتھ ہی مر جانا چاہیئے

    RECITATIONS

    خالد مبشر

    خالد مبشر,

    خالد مبشر

    اب شوق سے کہ جاں سے گزر جانا چاہیئے خالد مبشر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے