اب تو انگاروں کے لب چوم کے سو جائیں گے

بشیر بدر

اب تو انگاروں کے لب چوم کے سو جائیں گے

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    اب تو انگاروں کے لب چوم کے سو جائیں گے

    ہم وہ پیاسے ہیں جو دریاؤں کو ترسائیں گے

    خواب آئینے ہیں آنکھوں میں لیے پھرتے ہو

    دھوپ میں چمکیں گے ٹوٹیں گے تو چبھ جائیں گے

    صبح تک دل کے دریچوں کو کھلا رہنے دو

    درد گمراہ فرشتے ہیں کہاں جائیں گے

    نیند کی فاختہ سہمی ہوئی ہے آنکھوں میں

    تیر یادوں کی کمیں گاہوں سے پھر آئیں گے

    مآخذ:

    • کتاب : uraq salnama magazines (Pg. 526)
    • Author : Wazir Agha,Arif Abdul Mateen
    • مطبع : Daftar Mahnama Auraq Lahore (1967)
    • اشاعت : 1967

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY