اب تو اک پل کے لیے بھی نہ گنوائیں گے تمہیں

راشد انور راشد

اب تو اک پل کے لیے بھی نہ گنوائیں گے تمہیں

راشد انور راشد

MORE BYراشد انور راشد

    اب تو اک پل کے لیے بھی نہ گنوائیں گے تمہیں

    خود کو ہاریں گے مگر جیت کے لائیں گے تمہیں

    ہم کو پتھر کے پگھلنے کا عمل دیکھنا ہے

    ڈوبتے ڈوبتے آواز لگائیں گے تمہیں

    دل پہ اک بوجھ ہے کچھ سوچ کے ڈر لگتا ہے

    قصۂ درد کبھی اور سنائیں گے تمہیں

    ظاہری آنکھیں ہمیں ڈھونڈھ کہاں پائیں گی

    چشم باطن سے جو دیکھو نظر آئیں گے تمہیں

    ہیں ابھی پاس بہت پاس مگر سچ کہنا

    دور ہو جائیں تو کیا یاد نہ آئیں گے تمہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Shaam Hote hi (Pg. 70)
    • Author : Rashid Anwar Rashid
    • مطبع : Rashid Anwar Rashid (2007)
    • اشاعت : 2007

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY