اب تو خوشی کا غم ہے نہ غم کی خوشی مجھے

شکیل بدایونی

اب تو خوشی کا غم ہے نہ غم کی خوشی مجھے

شکیل بدایونی

MORE BY شکیل بدایونی

    اب تو خوشی کا غم ہے نہ غم کی خوشی مجھے

    بے حس بنا چکی ہے بہت زندگی مجھے

    وہ وقت بھی خدا نہ دکھائے کبھی مجھے

    ان کی ندامتوں پہ ہو شرمندگی مجھے

    رونے پہ اپنے ان کو بھی افسردہ دیکھ کر

    یوں بن رہا ہوں جیسے اب آئی ہنسی مجھے

    یوں دیجئے فریب محبت کہ عمر بھر

    میں زندگی کو یاد کروں زندگی مجھے

    رکھنا ہے تشنہ کام تو ساقی بس اک نظر

    سیراب کر نہ دے مری تشنہ لبی مجھے

    پایا ہے سب نے دل مگر اس دل کے باوجود

    اک شے ملی ہے دل میں کھٹکتی ہوئی مجھے

    راضی ہوں یا خفا ہوں وہ جو کچھ بھی ہوں شکیلؔ

    ہر حال میں قبول ہے ان کی خوشی مجھے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    اب تو خوشی کا غم ہے نہ غم کی خوشی مجھے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY