ابھی اس طرف نہ نگاہ کر میں غزل کی پلکیں سنوار لوں

بشیر بدر

ابھی اس طرف نہ نگاہ کر میں غزل کی پلکیں سنوار لوں

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    ابھی اس طرف نہ نگاہ کر میں غزل کی پلکیں سنوار لوں

    مرا لفظ لفظ ہو آئینہ تجھے آئنے میں اتار لوں

    میں تمام دن کا تھکا ہوا تو تمام شب کا جگا ہوا

    ذرا ٹھہر جا اسی موڑ پر تیرے ساتھ شام گزار لوں

    اگر آسماں کی نمائشوں میں مجھے بھی اذن قیام ہو

    تو میں موتیوں کی دکان سے تری بالیاں ترے ہار لوں

    کہیں اور بانٹ دے شہرتیں کہیں اور بخش دے عزتیں

    مرے پاس ہے مرا آئینہ میں کبھی نہ گرد و غبار لوں

    کئی اجنبی تری راہ میں مرے پاس سے یوں گزر گئے

    جنہیں دیکھ کر یہ تڑپ ہوئی ترا نام لے کے پکار لوں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    پریت ڈلن

    پریت ڈلن

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    فہد حسین

    فہد حسین

    نعمان شوق

    ابھی اس طرف نہ نگاہ کر میں غزل کی پلکیں سنوار لوں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY