ابھی تو فیصلہ باقی ہے شام ہونے دے

کبیر اجمل

ابھی تو فیصلہ باقی ہے شام ہونے دے

کبیر اجمل

MORE BYکبیر اجمل

    ابھی تو فیصلہ باقی ہے شام ہونے دے

    سحر کی اوٹ میں مہتاب جاں کو رونے دے

    تری نظر کے اشارے نہ روشنی بن جائیں

    تو پھر یہ رات کہاں جگنوؤں کو سونے دے

    بہت ہوا تو ہواؤں کے ساتھ رو لوں گا

    ابھی تو ضد ہے مجھے کشتیاں ڈبونے دے

    ہمارے بعد بھی کام آئے گی جنوں کی آگ

    یہ آگ زندہ ہے اس کو نہ سرد ہونے دے

    صدی سے مانگے گی اگلی صدی حساب گنہ

    مرے سرشک کو لمحوں کے داغ دھونے دے

    یہ غم مرا ہے تو پھر غیر سے علاقہ کیا

    مجھے ہی اپنی تمنا کا بار ڈھونے دے

    ببول سبز ہے باندھے حصار ناز اجملؔ

    مجھے بھی اپنی زمیں میں چنار بونے دے

    مأخذ :
    • کتاب : Ghazal Ke Rang (Pg. 284)
    • Author : Akram Naqqash, Sohil Akhtar
    • مطبع : Aflaak Publications, Gulbarga (2014)
    • اشاعت : 2015

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے