اچھا ہے تو نے ان دنوں دیکھا نہیں مجھے

فیضی

اچھا ہے تو نے ان دنوں دیکھا نہیں مجھے

فیضی

MORE BYفیضی

    اچھا ہے تو نے ان دنوں دیکھا نہیں مجھے

    دنیا نے تیرے کام کا چھوڑا نہیں مجھے

    ہاں ٹھیک ہے میں بھولا ہوا ہوں جہان کو

    لیکن خیال اپنا بھی ہوتا نہیں مجھے

    اب اپنے آنسوؤں پہ ہے سیرابئ حیات

    کچھ اور اس فلک پہ بھروسا نہیں مجھے

    ہے مہرباں کوئی جو کئے جا رہا ہے کام

    ورنہ معاش کا تو سلیقہ نہیں مجھے

    اے رہگذار سلسلۂ عشق بے لگام

    جانا کہاں ہے تو نے بتایا نہیں مجھے

    ہے تو مرا بھی نام سر فہرس جنوں

    لیکن ابھی کسی نے پکارا نہیں مجھے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    اچھا ہے تو نے ان دنوں دیکھا نہیں مجھے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY