اچھا سا کوئی سپنا دیکھو اور مجھے دیکھو

ثروت حسین

اچھا سا کوئی سپنا دیکھو اور مجھے دیکھو

ثروت حسین

MORE BY ثروت حسین

    اچھا سا کوئی سپنا دیکھو اور مجھے دیکھو

    جاگو تو آئینہ دیکھو اور مجھے دیکھو

    سوچو یہ خاموش مسافر کیوں افسردہ ہے

    جب بھی تم دروازہ دیکھو اور مجھے دیکھو

    صبح کے ٹھنڈے فرش پہ گونجا اس کا ایک سخن

    کرنوں کا گلدستہ دیکھو اور مجھے دیکھو

    بازو ہیں یا دو پتواریں ناؤ پہ رکھی ہیں

    لہریں لیتا دریا دیکھو اور مجھے دیکھو

    دو ہی چیزیں اس دھرتی میں دیکھنے والی ہیں

    مٹی کی سندرتا دیکھو اور مجھے دیکھو

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY