اچھا تمہارے شہر کا دستور ہو گیا

بشیر بدر

اچھا تمہارے شہر کا دستور ہو گیا

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    اچھا تمہارے شہر کا دستور ہو گیا

    جس کو گلے لگا لیا وہ دور ہو گیا

    کاغذ میں دب کے مر گئے کیڑے کتاب کے

    دیوانہ بے پڑھے لکھے مشہور ہو گیا

    محلوں میں ہم نے کتنے ستارے سجا دیئے

    لیکن زمیں سے چاند بہت دور ہو گیا

    تنہائیوں نے توڑ دی ہم دونوں کی انا!

    آئینہ بات کرنے پہ مجبور ہو گیا

    دادی سے کہنا اس کی کہانی سنائیے

    جو بادشاہ عشق میں مزدور ہو گیا

    صبح وصال پوچھ رہی ہے عجب سوال

    وہ پاس آ گیا کہ بہت دور ہو گیا

    کچھ پھل ضرور آئیں گے روٹی کے پیڑ میں

    جس دن مرا مطالبہ منظور ہو گیا

    مآخذ:

    • کتاب : Aahat (Pg. 33)
    • Author : Bashir Badar
    • مطبع : M.R. Publications (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY