اچھائی سے ناتا جوڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

عزیز انصاری

اچھائی سے ناتا جوڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

عزیز انصاری

MORE BYعزیز انصاری

    اچھائی سے ناتا جوڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    الٹے سیدھے دھندے چھوڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    مستقبل کی تیاری کرنے میں ہے ہشیاری

    وقت سے آگے تو بھی دوڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    دیواریں جو حائل ہیں تیری ہار پہ مائل ہیں

    دیواروں سے سر مت پھوڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    دولت دینے سے عزت بچتی ہے تو کر ہمت

    سامنے رکھ دے ایک کروڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    اشک ندامت سے دل کا بھیگا دامن ہے اچھا

    اس دامن کو تو نہ نچوڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    جھوٹی سچی کہہ کر جو تجھ کو رسوا کرتا ہو

    تو بھی اس کا بھانڈا پھوڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    شاخ پہ رہ کے پک جائیں اپنے آپ ہی تھک جائیں

    تو یہ کچے پھل مت توڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    شیطانی پنجہ کیا چیز ایک مجاہد تو ہے عزیزؔ

    شیطانی پنجے کو مروڑ ورنہ پھر پچھتائے گا

    مأخذ :
    • کتاب : Bole Meri Gazal (Pg. 72)
    • Author : Aziz Ansari
    • مطبع : Aziz Ansari, Station Director Akashvani Jalgaon (2000)
    • اشاعت : 2000

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY