اگر تم دل ہمارا لے کے پچھتائے تو رہنے دو

مضطر خیرآبادی

اگر تم دل ہمارا لے کے پچھتائے تو رہنے دو

مضطر خیرآبادی

MORE BYمضطر خیرآبادی

    اگر تم دل ہمارا لے کے پچھتائے تو رہنے دو

    نہ کام آئے تو واپس دو جو کام آئے تو رہنے دو

    مرا رہنا تمہارے در پہ لوگوں کو کھٹکتا ہے

    اگر کہہ دو تو اٹھ جاؤں جو رحم آئے تو رہنے دو

    کہیں ایسا نہ کرنا وصل کا وعدہ تو کرتے ہو

    کہ تم کو پھر کوئی کچھ اور سمجھائے تو رہنے دو

    دل اپنا بیچتا ہوں واجبی دام اس کے دو بوسے

    جو قیمت دو تو لو قیمت نہ دی جائے تو رہنے دو

    دل مضطرؔ کی بیتابی سے دم الجھے تو واپس دو

    اگر مرضی بھی ہو اور دل نہ گھبرائے تو رہنے دو

    مأخذ :
    • کتاب : Khirman (Part-1) (Pg. 155)
    • Author : Muztar Khairabadi
    • مطبع : Javed Akhtar (2015)
    • اشاعت : 2015

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY