اے دوست تو نے وار یہ بھرپور کر دیا

دعا علی

اے دوست تو نے وار یہ بھرپور کر دیا

دعا علی

MORE BY دعا علی

    اے دوست تو نے وار یہ بھرپور کر دیا

    پہلے قریب کر کے مجھے دور کر دیا

    رہتی ہوں تیری یاد میں مدہوش رات دن

    تیرے سرور و کیف نے مخمور کر دیا

    کشمش سی نازنین تھی شاخ بدن مری

    چاہت کی آب و تاب سے انگور کر دیا

    خوشبو ترے بدن کی ہے سانسوں میں آج تک

    تو نے ملن کے بعد تو پر نور کر دیا

    تنہائی زندگی کی کٹھن ہو گئی تھی یار

    لمس و سرور بخش کے مسرور کر دیا

    مجھ کو شراب عشق پلا نے کی دیر تھی

    میں نے بھی کائنات کو مخمور کر دیا

    ملبہ تمہاری یاد کا ڈھویا ہے رات دن

    نازک سی ایک لڑکی کو مزدور کر دیا

    دیتی ہیں مجھ کو طعنے مری سب سہیلیاں

    کہتی ہیں تجھ کو عشق نے مغرور کر دیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY