اے ہمدماں بھلاؤ نہ تم یاد رفتگاں

ولی اللہ محب

اے ہمدماں بھلاؤ نہ تم یاد رفتگاں

ولی اللہ محب

MORE BYولی اللہ محب

    اے ہمدماں بھلاؤ نہ تم یاد رفتگاں

    واماندگاں کو ہے یہی ارشاد رفتگاں

    جو غنچہ ناشگفتہ ہی جھڑ جائے شاخ سے

    ہے اس چمن میں وہ دل ناشاد‌ رفتگاں

    چشم‌ و دل و جگر کے لئے اشک درد و داغ

    ہم پاس ہے یہ تحفہ‌ٔ امداد رفتگاں

    اس کارواں سرا میں یہ بانگ جرس نہیں

    ہے یہ صدائے نالہ و فریاد رفتگاں

    آسیدہ‌ و روندہ سے پوچھا بہت محبؔ

    دریافت پر نہ کچھ ہوئی روداد رفتگاں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY