اے جنوں کچھ تو کھلے آخر میں کس منزل میں ہوں

سرور بارہ بنکوی

اے جنوں کچھ تو کھلے آخر میں کس منزل میں ہوں

سرور بارہ بنکوی

MORE BY سرور بارہ بنکوی

    اے جنوں کچھ تو کھلے آخر میں کس منزل میں ہوں

    ہوں جوار یار میں یا کوچۂ قاتل میں ہوں

    پا بہ جولاں اپنے شانوں پر لیے اپنی صلیب

    میں سفیر حق ہوں لیکن نرغۂ باطل میں ہوں

    جشن فردا کے تصور سے لہو گردش میں ہے

    حال میں ہوں اور زندہ اپنے مستقبل میں ہوں

    دم بخود ہوں اب سر مقتل یہ منظر دیکھ کر

    میں کہ خود مقتول ہوں لیکن صف قاتل میں ہوں

    اک زمانہ ہو گیا بچھڑے ہوئے جس سے سرورؔ

    آج اسی کے سامنے ہوں اور بھری محفل میں ہوں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    سرور بارہ بنکوی

    سرور بارہ بنکوی

    مآخذ:

    • Book : Ghazalistaan (Pg. 220)
    • Author : Farkhanda Hashmi, Najeeb Rampuri
    • مطبع : Farid Book Depot ltd, New Delhi (2003)
    • اشاعت : 2003

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY