اے خدا کیسا سماں آیا ہے

عامر سوقی

اے خدا کیسا سماں آیا ہے

عامر سوقی

MORE BYعامر سوقی

    اے خدا کیسا سماں آیا ہے

    شہر میں ہر سو دھواں چھایا ہے

    لٹ گئی خلق خدا کی حسرت

    عہد نو ایسا زیاں لایا ہے

    ہجر کے دشت میں یکسر میں نے

    غم کے دریا کو رواں پایا ہے

    صرف مجھ کو نہیں دولت کی طلب

    سب کو درکار یہاں مایا ہے

    بڑی مشکل سے جہاں کو شوقیؔ

    میرا انداز بیاں بھایا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY