اے شمع تجھ پہ رات یہ بھاری ہے جس طرح

ناطقؔ لکھنوی

اے شمع تجھ پہ رات یہ بھاری ہے جس طرح

ناطقؔ لکھنوی

MORE BYناطقؔ لکھنوی

    اے شمع تجھ پہ رات یہ بھاری ہے جس طرح

    میں نے تمام عمر گزاری ہے اس طرح

    دل کے سوا کوئی نہ تھا سرمایہ اشک کا

    حیراں ہوں کام آنکھوں کا جاری ہے کس طرح

    عنصر ہے خیر و شر کا ہر اک شے میں یوں نہاں

    ہر شمع بزم نوری و ناری ہے جس طرح

    بس یوں سمجھ لو مجھ کو امید سحر نہ تھی

    کیا پوچھتے ہو رات گزاری ہے کس طرح

    اس نقش مستقل پہ ہے شرمندہ آئینہ

    تصویر ان کی دل پہ اتاری ہے اس طرح

    ناطقؔ جلال میں بھی اثر اس قدر نہیں

    رعب جمال قلب پہ طاری ہے جس طرح

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    اے شمع تجھ پہ رات یہ بھاری ہے جس طرح نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY