ایسے بھی کچھ لوگ ہیں جو دن بھر کی کمائی کھو دیتے ہیں

میر یٰسین علی خاں

ایسے بھی کچھ لوگ ہیں جو دن بھر کی کمائی کھو دیتے ہیں

میر یٰسین علی خاں

MORE BYمیر یٰسین علی خاں

    ایسے بھی کچھ لوگ ہیں جو دن بھر کی کمائی کھو دیتے ہیں

    پھر جھٹ پٹ کرتے تاروں کی چھاؤں میں بیٹھے رو دیتے ہیں

    روشن روشن حرفوں میں ہم دن بھر جو کچھ لکھ پاتے ہیں

    ظلمت کے کالے پانی سے رات کو وہ بھی دھو دیتے ہیں

    اب تو ہی ہمارے چارہ گر کر ان کا مداوا دنیا میں

    جو دن بھر تو پھول چنیں اور رات کو کانٹے بو دیتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY