عجب پر لطف منظر دیکھتا رہتا ہوں بارش میں

خالد معین

عجب پر لطف منظر دیکھتا رہتا ہوں بارش میں

خالد معین

MORE BYخالد معین

    عجب پر لطف منظر دیکھتا رہتا ہوں بارش میں

    بدن جلتا ہے اور میں بھیگتا رہتا ہوں بارش میں

    صدائیں ڈوب جاتی ہیں ہوا کے شور میں اور میں

    گلی کوچوں میں تنہا چیختا رہتا ہوں بارش میں

    دریچے میں در آتے ہیں بہت سے مہرباں چہرے

    میں ان پر شوخ جملے پھینکتا رہتا ہوں بارش میں

    دیے جلتے ہیں، بجھتے ہیں، مرے اطراف میں اور میں

    بس اک سائے کے پیچھے بھاگتا رہتا ہوں بارش میں

    پس قوس قزح اک صورت مہتاب کی جھلمل

    میں اس جھلمل کو پہروں دیکھتا رہتا ہوں بارش میں

    نہ سونا میرے بس میں ہے، نہ شب بھر جاگنا خالدؔ

    میں آنکھیں کھولتا اور میچتا رہتا ہوں بارش میں

    RECITATIONS

    عاطر علی سید

    عاطر علی سید

    عاطر علی سید

    عجب پر_لطف منظر دیکھتا رہتا ہوں بارش میں عاطر علی سید

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY