عجب تلاش مسلسل کا اختتام ہوا

آنس معین

عجب تلاش مسلسل کا اختتام ہوا

آنس معین

MORE BYآنس معین

    عجب تلاش مسلسل کا اختتام ہوا

    حصول رزق ہوا بھی تو زیر دام ہوا

    تھا انتظار منائیں گے مل کے دیوالی

    نہ تم ہی لوٹ کے آئے نہ وقت شام ہوا

    ہر ایک شہر کا معیار مختلف دیکھا

    کہیں پہ سر کہیں پگڑی کا احترام ہوا

    ذرا سی عمر عداوت کی لمبی فہرستیں

    عجیب قرض وراثت میں میرے نام ہوا

    نہ تھی زمین میں وسعت مری نظر جیسی

    بدن تھکا بھی نہیں اور سفر تمام ہوا

    ہم اپنے ساتھ لئے پھر رہے ہیں پچھتاوا

    خیال لوٹ کے جانے کا گام گام ہوا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    عجب تلاش مسلسل کا اختتام ہوا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY