عجیب شہر کا نقشا دکھائی دیتا ہے

آسی رام نگری

عجیب شہر کا نقشا دکھائی دیتا ہے

آسی رام نگری

MORE BYآسی رام نگری

    عجیب شہر کا نقشا دکھائی دیتا ہے

    جدھر بھی دیکھو اندھیرا دکھائی دیتا ہے

    نظر نظر کی ہے اور اپنے اپنے ظرف کی بات

    مجھے تو قطرے میں دریا دکھائی دیتا ہے

    برا کہے جسے دنیا برا نہیں ہوتا

    مری نظر میں وہ اچھا دکھائی دیتا ہے

    نہیں فریب نظر یہ یہی حقیقت ہے

    مجھے تو شہر بھی صحرا دکھائی دیتا ہے

    ہیں صرف کہنے کو بجلی کے قمقمے روشن

    ہر ایک سمت اندھیرا دکھائی دیتا ہے

    عجیب حال ہے سیلاب بن گئے صحرا

    جسے بھی دیکھیے پیاسا دکھائی دیتا ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Harf Harf Khowab (Pg. 103)
    • Author : asi ramnagari
    • مطبع : Nasim Pathara Po. Moghalsarai (Varansi) (1992)
    • اشاعت : 1992

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY