عکس بھی کب شب ہجراں کا تماشائی ہے

اشرف علی فغاں

عکس بھی کب شب ہجراں کا تماشائی ہے

اشرف علی فغاں

MORE BYاشرف علی فغاں

    عکس بھی کب شب ہجراں کا تماشائی ہے

    ایک میں آپ ہوں یا گوشۂ تنہائی ہے

    دل تو رکتا ہے اگر بند قبا باز نہ ہو

    چاک کرتا ہوں گریباں کو تو رسوائی ہے

    طاقت ضبط کہاں اب تو جگر جلتا ہے

    آہ سینہ سے نکل لب پہ مرے آئی ہے

    میں تو وہ ہوں کہ مرے لاکھ خریدار ہیں اب

    لیک اس دل سے دھڑکتا ہوں کہ سودائی ہے

    دل بیتاب فغاںؔ امت ایوب نہیں

    نہ اسے صبر ہے ہرگز نہ شکیبائی ہے

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    عکس بھی کب شب ہجراں کا تماشائی ہے فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY